Skip navigation |

ہیپاٹائٹس اے، بی اور سی

جگر پر حملہ کرنے والے ۳ اہم وائرسز ہیں ۔ہیپاٹائٹس اے، ہیپاٹائٹس بی اورہیپاٹائٹس سی۔یہ سب ایک دوسرے سے مختلف ہیں

ہیپاٹائٹس اے جو کہ خاصہ خطرناک ہو سکتا ہے ذیادہ سے ذیادہ چند ہفتے تک رہتا ہے کیونکہ آپ کا جسم اس کا مقابلہ اچھے طریقے سے کر لیتا ہے۔ یہ انفکشن والے پانی اور کھانے سے پھیلتا ہے۔ہیپاٹائٹس اے کے لیے ویکسین موجود ہے

ہیپاٹائٹس بی انفکشن والے پانی اور کھانے سے نہیں بلکہ انفکشن والے خون سے پھیلتا ہے۔اس میں مبتلہ مریض کے ساتھ رشتہِ ازدواج کےدوران بھی یہ انفکشن پھیل سکتا ہے۔ عام طور پر جسم اس کا صحیح طرح سے مقابلہ نہیں کر پاتا اور یہ موذی مرض بن جاتا ہے۔جو اگے چل کر جگر کے سرطان کی شکل اختیار کر سکتا ہے۔ اس کا علاج موجود ہے۔ ہیپاٹائٹس بی کے لیے ویکسین بھی موجود ہے۔

ہیپاٹائٹس سی بھی انفکشن والے پانی اور کھانےسے نہیں بلکہ انفکشن والے خون سے پھیلتا ہے۔اس کا رشتہِ ازدواج کے عمل کے دوران پھیلناعام فہم نہیں۔عام طور پر دیکھے گے کیسز میں آپ کا جسم اس کا مقابلہ صحیح طرح نہیں کر سکتا اور یہ مہلک بیماری بن جاتی ہے جو اگے چل کرجگر کے سرطان کی شکل اختیار کر سکتا ہے۔ اس کا علاج موجود ہے لیکن ہیپاٹائٹس سی کے لیے ویکسین موجود نہیں ہے

ہیپاٹائٹس اے اور ہیپاٹائٹس بی کی ویکسین آپ کو ہیپاٹائٹس سی ہونے سے نہیں بچا سکے گی۔

کیا آپ کو ا س کے ہونے کا خدشہ ہو سکتا ہے؟

اگر آپ کو ا س بیماری کے ہونے کا خدشہ ہے تو پھر ضروری ہے کہ آپ ہیپاٹائٹس بی اور سی کے لیے اپنا ٹیسٹ کروائیں۔ کیونکہ یہ دونوں اگے چل کرجگر کے سرطان کا باعث بن سکتے ہیں۔ یہ اس لیے بھی ضروری ہے کیوکہ ہو سکتا ہے آپ بیمار ہونے کے کوئی بھی اثرات محسوس نہ کریں۔ ہیپاٹائٹس بی اور سی وائرس میں مبتلہ کئی لوگوں میں کوئی بھی علامتیں نظر نہیں آتیں۔بعض اوقات یہ علامتیں اس وقت نمایاں ہوتی ہیں جب آپ کاجگربْری طرح خراب ہو چکا ہوتا ہے

دْنیابھر میں500 ملین افراد شدید ہیپاٹائٹس بی یا سی وائرس کے انفکشن میں مبتلہ ہیں۔اور یہ دونوں وائرس عام ہیں ساوْتھ ایشا میں

انڈیا، پاکستان اور بنگلہ دیش میں۔

اگر آپ ان میں سے کسی بھی ملک میں پیداہو ےہیں یا اپنا ذیادہ وقت وہاں گزارتے ہیں تو آپ کو اس وائرس کے ہونے کا خدشہ ہوسکتا ہے۔ اگر وہاں رہتے ہوے :

۱ آپ کو طبّی انجکشن لگا ہو.۲ آپ کو خون چڑھایا گیا ہو.۳ ہسپتال میں آپ کا آپریشن کیا گیا ہو۔

۴ آپ ڈینٹسٹ کے پاس گئے ہو۔۵ آپ کے خطنےکیے گے ہو۔ ۶آپ کی ڈارھی یا شیئو بنوائی گئی ہو۔

آپ کے خاندان میں خاص طور پر اگر آپ کی والدہ کو ہیپاٹائٹس بی یا ہیپاٹائٹس سی ہوتو آپ کو بیماری کے ہونے کا خدشہ ہو سکتا ہے۔اگر کسی کو ہیپاٹائٹس بی کا انفکشن ہواورآپ نے کسی بھی وقت غیر محفوظ رشتہِ ازدواج کاعمل کیا ہو تو آپ کو ہیپاٹائٹس بی ہونے کا خدشہ ہو سکتا ہے۔

آپ کوکیا کرناچاہیے؟

اگر آپ سمجتےہیں آپ کوانفکشن کا خدشہ ہے تو آپ:

۔آپ اردویاپنجابی کی قابلِ اعتبارہیلپ لائن نمبر020 7089 6203. پر کال کریں .یہ کام آپ اپنا نام دیے بغیر کر سکتے ہیں اگر آپ کو ضرورت ہوئی تو آپ کو ٹسٹ کروانے کا مشورہ دیا جاے گا

۔اپنے جی۔پی سے بات کریں۔اگر آپ کو ضرورت ہوئی توآپ کا ڈاکٹر آپ کو ٹسٹ کروانے کا مشورہ دے سکے گا براہِ مہربانی اپنے ساتھ یہ پرچہ لے کر جائیں۔

آن لائن اس ویب سائت پر جائیںwww.hepctrust.org.uk/urduیہاں پر آپ کے لیے اس انفکشن کے رسک کے بارے میں ذیادہ تفصیل سے بیان کیا گیا ہے جو آپ کوفیصلہ کرنے میں مدد دے گا کہ آپ کو ٹسٹ کروانے کی ضرورت ہے یا نہیں۔

اس کے بعد کیاہوتا ہے؟

اگرآپ کو ٹسٹ کروانے کی ضرورت ہوئی تو وہ آپ اپنے جی پی کی سرجری سے کروا سکتے ہیں۔یہ ایک عام خون کا ٹسٹ ہے جس کے نتائج ۲ ہفتوں میں آ جاتے ہیں۔ اگر آپکا ٹیسٹ مثبت ہے تو آپ کو ہسپتال بھیجا جاہے گا جہاں اگر آپ کوضرورت ہوئی تو علاج کیا جاے گا۔یہ علاج آپ کی جان بچا سکتا ہے